بریکنگ نیوز

بپن راوت کی پاکستان کیخلاف ہرزہ سرائی آر ایس ایس سوچ کی عکاس ہے

اگلے روز دفتر خارجہ نے بھارتی چیف آف ڈیفنس بپن راوت کے پاکستان اور چین کے لازوال اورمضبوط دوستی کے رشتوں پر حالیہ بیان کی پرزور مذمت کرتے ہوئے بھارتی چیف آف ڈیفنس کے بیان کو بے معنی، پاکستان مخالف سوچ کا عکاس اور حقائق کے منافی قرار دیاہے۔ ہماری رائے میں یہ حقیقت اپنی جگہ موجود ہے کہ بھارت کو روز اول سے ہی پاکستان اور چین کی دوستی کانٹے کی طرح چبھ رہی ہے ۔ لہذا بھارتی چیف آف ڈیفنس کا یہ بیان کہ پاکستان چین گٹھ جوڑ علاقائی سٹرٹیجک استحکام کیلئے خطرے کا باعث ہے ۔بھارتی منفی سوچ اور ناکامی کی عکاس ہے۔ اس میںکوئی دو رائے نہیں کہ بپن راوت کا یہ بیانیہ بلاشبہ آر ایس ایس، بی جے پی کی انتہا پسند انہ اور شدت سوچ کو ظاہر کرتا ہے اور یہ بات اب کھل کر سامنے آگئی ہے کہ نریندر مودی سرکارکے گماشتے اکھنڈ بھارت اور ہندوتوا کے خطرناک منصوبے پر عمل پیرا ہیں۔ ہماری دانست میں پاک چین دوستی ہمالیہ سے اونچی، سمندروں سے گہری ہے اور بھارت اپنے خبث باطن کا اظہار مختلف موقعوں پر کرتا چلا آیا ہے کیونکہ دنیا کے ہر فورم پر چین پاکستان کا ایک ایسامخلص دوست ملک بن کرسامنے آیا ہے جو ہر صورت میںبھارت کے راستے کی دیوارثابت ہواہے۔ حقیقت میں یہ دو پڑوسی ملک ہیں لیکن اگر پاکستان چین کی دوستی کو یک جان دو قالب قرار دیا جائے تو غلط نہ ہوگا۔ اس میں بھی کوئی دو رائے نہیںکہ بھارت کو پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ سے بھی تکلیف ہے لیکن اس تکلیف میں امریکی حکومت بھی شامل ہے کیونکہ امریکہ چین کی بڑھتی ہوئی طاقت اور اس خطے میں چین کے اثر و رسوخ کو برداشت نہیں کرپا رہا ۔ بھارت امریکہ کی آشیر باد اور خوشنودی حاصل کرنے کیلئے امریکہ کی اس دکھتی رگ کا بھر پور فائدہ اٹھا رہا ہے۔ نریندر مودی، امریکی صدر ٹرمپ جن کا بوریا بستر حالیہ انتخابات میں ناکامی کی وجہ سے گول ہوچکا ہے کی خوشنودی کیلئے پاکستان چین دشمنی میں بڑھ چڑھ کر سامنے آرہا تھا۔ چین نے لداخ میں بھارت کو ایک بھرپور سبق دیا اور اس کی ایسی درگت بنائی کہ بھارتی حکومت اور اس کے کارندے چین کے خوف سے اپنی خفت اور ناکامی کا اظہار کرتے ہوئے ڈر محسوس کرتے ہیں۔ لیکن دوسرے لمحے بھارتی حکومت امریکہ کی خوشنودی کی خاطر سی پیک منصوبے کو سبوتاژ کرنے کیلئے پاکستان پر دبائو ڈالنے میں مسلسل مصروف رہتی ہے۔ ایک طرف سی پیک منصوبہ اور دوسری طرف پاکستان چین کی لازوال دوستی کے رشتے بھارتی توسیع پسندانہ عزائم کے راستے میں بلاشبہ ایک مضبوط دیوار ہیں تو دوسری طرف اس منصوبے کی کامیابی کی صورت میں پاکستان کا اقتصادی اور معاشی مستقبل محفوظ اور مضبوط بننے کے خوف نے بھارت کی نیندیں اڑا دی ہیں۔ دینا جانتی ہے کہ جنوبی ایشیا کے امن کو بھارتی پالیسیوں کے باعث خطرات لاحق ہیں بھارت کے اندر اقلیتیں غیر محفوظ ہیں،مقبوضہ کشمیر میں امن و سلامتی نام کو نہیں۔ قابض بھارتی افواج نے کشمیریوں کے بنیادی حقوق کو کچل کر رکھ دیا ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ بھارتی حکمران ہوں یا بپن راوت جیسے پاکستان دشمن عناصر ان کی تان ہمیشہ پاکستان مخالف بیان بازی اور پاکستان کو نقصان پہنچانے کے منصوبوں اور سازشوں پر ہی ٹوٹتی ہے۔ موجودہ حالات کے تناظر میں بھارتی عزائم کو خطے میں خطرے کی گھنٹی قرا ر دیا جاسکتا ہے اور اگر بھارت کے بڑھتے ہوئے مکروہ عزائم کو نہ روکا گیا تو یہ صورتحال جنوبی ایشیاء میں کسی بڑی جنگ کا شاخسانہ بن سکتی ہے۔

About Aziz

Check Also

پرامن افغانستان بلاشبہ خطے کے امن اور خوشحالی کی ضمانت ہے

اگلے روز آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے چیئرمین افغان حزب وحدت اسلامی محمد …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *