بریکنگ نیوز

اقوام متحدہ اور عالمی برادری مسئلہ کشمیر کو حل کرنے میں ناکام

بھارت مذمت سے نہیں مرمت سے درست ہوگا
کشمیریوں کے یوم حق خود ارادیت کے موقع پر سینٹ (ایوان بالا) میں خصوصی اجلاس کے دوران اظہار خیال کرتے ہوئے حکومت اور اپوزیشن کے اراکین نے کشمیریوں کی حق خود ارادیت کی حمایت کرتے ہوئے انہیںبھرپور انداز میںخراج تحسین پیش کیا۔ سیاسی قیادت نے عالمی قوتوں کی توجہ مسئلہ کشمیر کے حل کی طرف مبذول کراتے ہوئے کشمیر کی آزادی کے لیے فوری اقدامات کا مطالبہ کیا ۔ اراکین کاکہنا تھا کہ ڈیڑھ سال ہونے کو ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں مارشل لاء جیسی کیفیت ہے اور وہاں کسی بھی مشن یا جرنلسٹ کو جانے کی اجازت نہیں ہے۔ایوان بالا اراکین نے کہا کہ اب عملی کام ناگزیر ہے اور تقریروں سے کام نہیں چلے گا،مودی کے ظلم کے خلاف وار کرائم میں انٹرنیشنل عدالت میں پاکستان کو جانا چاہیے۔ ہماری رائے میں پاکستان اور کشمیر لازم و ملزوم ہیںاور بلاشبہ کشمیریوں کی حق خود ارادیت کی تحریک تقسیم ہند کا نا مکمل ایجنڈا ہے۔ مقبوضہ جموںو کشمیر میںبہادر کشمیری عوام اپنے حق کے ساتھ ساتھ مملکت خداداد پاکستان کی تکمیل کی جنگ بھی لڑ رہے ہیں۔جس کے ساتھ الحاق کا فیصلہ 19جولائی 1947 ء یعنی پاکستان کے قیام سے تین ہفتے قبل ہی کشمیریوں نے کردیا تھا۔ بھارت کشمیریوں کی جدوجہد آزادی سے خائف ہوکر اقوام متحدہ کی طرف بھاگا لیکن وہاں اس کو منہ کی کھانی پڑی کیونکہ عالمی ادارے نے اپنی قرار دادوں کے ذریعے بھارت اور پاکستان کو کشمیر میں رائے شماری کرانے کیلئے پابند کیا ۔ بھارت نے وقتی طور پر عالمی برادری کو گمراہ کرنے اور وقت گزاری کیلئے رائے شماری کرانے کا وعدہ کرلیا لیکن وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ بھارت مقبوضہ ریاست میں اپنی فوج میں اضافہ کرتا گیا اور اپنے غیر قانونی تسلط کو مستقل کرنے کیلئے کشمیریوں پر ظلم و ستم اور انسانی حقوق کی پامالیوںمیںاضافہ کرتا گیا اور بالآخر پانچ اگست 2019ء کو بھارت نے اپنے آئین سے دفعہ 370 اور 35-A کو ختم کردیا لیکن مودی سرکار کو یہ فیصلہ مہنگا پڑا۔ کشمیریوں نے بھارت کے سامنے جھکنے اور اپنے حق کو چھوڑنے کی بجائے اپنی جدوجہد میں تیزی لائی اور بھارت کو عالمی سطح پر بے نقاب کردیا۔ دریں اثناء آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی صدارت میں کور کمانڈرز کانفرنس میں ملکی سیکیورٹی صورتحال کا جائزہ لینے کے علاوہ کشمیر کے یوم حق خود ارادیت کے موقع پر کشمیریوں سے مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے پاک فوج کی اعلیٰ قیادت ، آرمی چیف اور کورکمانڈرز نے بہادر کشمیریوں کو زبردست خراج تحسین پیش کیا۔پاک آرمی قیادت نے بھارتی مظالم پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ قابض فورسز کے دہائیوں سے جاری ظلم وتشدد بھی کشمیریوں کی جدوجہد کو دبا نہیں سکا۔ آرمی قیادت نے اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کے حل تک کشمیریوں کی حمایت جاری رکھنے کا اعادہ کیا ۔آرمی قیادت کا کہنا تھا کہ کسی بھی جارحیت کے جواب کے لیے تربیت اور مہارت کا تسلسل لازمی ہے۔ درپیش چیلنجز سے نمٹنے کے لیے جامع قومی کوششوں کی ضرورت ہے۔ چیلنجز سے نمٹنے کے لیے معاشرے کے تمام طبقوں کو مثبت کردار ادا کرنا چاہیے۔اس میں کوئی دو رائے نہیں کہ پاکستان کی سیاسی اور عسکری قیادت کشمیر کے حوالے سے متحد اور منظم ہیں اور 22کروڑ عوام پا ک آرمی کی پشت پر کھڑی ہے ۔ پاکستانی قوم کشمیری عوام کو اپنا جزو لاینفک اور اپنے لئے لازم و ملزوم سمجھتے ہیں ۔ یہی جذبہ مقبوضہ کشمیر میں جدوجہد میں مصروف کشمیری عوام کا بھی ہے جو پاکستان کو اپنا وطن سمجھتے ہیں۔ حد تو یہ ہے کہ بہادر کشمیری نوجوان پاکستان کے لئے نعرہ تکبیربلند کرتے ہوئے بھارتی فوج کی دہشتگردی کا شکار ہوتے ہیں اور پاکستانی پرچم میں لپٹ کر دفن ہونے کو اپنے لئے سعادت سمجھتے ہیں ۔ ہماری دانست میں اب وقت آگیا ہے کہ حکومت پاکستان اور پاک فوج کشمیریوںکے اس جذبہ کو مد نظر رکھتے ہوئے عملی اقدامات اٹھائیں۔ عالمی برادری اور اقوام متحدہ کا ادارہ مسئلہ کشمیر کو حل کرنے میں ناکام ہوچکے ہیں۔ بھارت مذمت سے نہیں مرمت سے ہی ٹھیک ہونے والا ملک ہے ۔ کسی بھی جارحیت کی صورت میں بھارت کو ایسا سبق سکھایا جائے کہ اس کی بزدل فوج کشمیر سے راہ فرار میںہی اپنی عافیت سمجھے اور کشمیری عوام آزادی سے ہمکنار ہوں۔

About Aziz

Check Also

آرمی چیف کا دورہ قطر انتہائی اہمیت کا حامل ہے

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باوجوہ کا حالیہ دو روزہ قطر بلاشبہ انتہائی اہمیت کا …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *