بریکنگ نیوز

پرامن افغانستان بلاشبہ خطے کے امن اور خوشحالی کی ضمانت ہے

اگلے روز آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے چیئرمین افغان حزب وحدت اسلامی محمد کریم خلیلی نے ملاقات کی۔ اس موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا تھا کہ افغانستان میں امن کا مطلب پاکستان میں امن ہے۔ افغانستان میں استحکام اور خوشحالی تمام ہمسایوں کیلئے ضروری ہے۔ ہماری رائے میں آرمی چیف کا یہ کہنا بالکل درست ہے کہ پرامن افغانستان نہ صرف خطے کی تعمیر و ترقی ، امن و سلامتی کیلئے ضروری ہے بلکہ افغانستان کے ساتھ پاکستان کا امن ، خوشحالی اور استحکام منسلک ہیں۔ اس میں کوئی دو رائے نہیں کہ پاکستان دنیا کا واحد ملک ہے جو افغانستان کے امن ، ترقی ، خوشحالی اور استحکام کیلئے خلوص دل سے روز اول سے کوشاں ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ امریکی فوجوںکی واپسی کے حوالے سے افغان امن عمل کے انعقاد میں پاکستان کا ایک کلیدی کردار رہا ۔ یہ پاکستان کی بہترین خارجہ حکمت عملی اور مثبت پالیسی کا ہی نتیجہ کہ آج افغانستان میں پاکستان کیلئے بہتر جذبات کا احساس موجود ہے۔ اس سے قطعہ نظر کہ حکومت کے اندر بھارت نواز لابی موجود ہے لیکن بھارت کو کافی حد تک افغانستان سے دیس نکالا ہوچکا ہے۔ یہ بھی ایک اچھی پیشرفت ہے کہ افغان امن عمل میں بھارت کا کوئی حصہ یا تعلق نہیں رہا ۔ جس کی بھارت کو بہت تکلیف ہے اور وہ اپنے اس خبط باطن کا اظہار پاکستان دشمن پالیسی اور سازشوں کے ذریعے کررہا ہے۔ بھارت کو پاکستان کی عالمی سطح پر اہمیت اور عالمی طاقتوں کی طرف سے پذیرائی کسی صورت ہضم نہیں ہوپارہی لہذا بھارت نہ صرف افغانستان کے اندر بیٹھ کر پاکستان کے خلاف سازشوں کا جال اور دہشتگردی کو ہوا دینے کیلئے تانے بانے بنتا ہے تاکہ اپنی اس منفی سوچ کے ذریعے وطن عزیز پاکستان میں دہشتگردی کو فروغ دے اور عدم استحکام پیدا کرے۔ بھارت خاص طور پر وزیر اعظم نریندر مودی نہ صرف عالم اسلام کا دشمن ہے بلکہ وہ پاکستان دشمنی میں بھی بہت حد تک آگے ہے۔ نریندر مودی کو اس بات کی فکر لاحق ہے کہ اس کی منفی سوچ اور مکروہ عزائم پاکستان کے خلاف بالخصوص سی پیک منصوبے کو سبوتاژ کرنے کے حوالے سے کامیابی سے ہمکنار نہ ہوسکی جس کے لئے امریکہ نے بھارت پر نوازشات کی بوچھا ڑ کررکھی تھی۔ لہذا اپنے گارڈ فادر اور مربی امریکہ کو خوش کرنے کیلئے بھارتی خفیہ ایجنسیوںنے پاکستان کے خلاف ہر حربہ استعمال کیا جس میں افغانستان میں دہشتگردی اور امن عمل کو سبوتاژ کرنے کے علاوہ سرحد کے اس پار افغانستان سے پاکستان پر دہشتگردی کی کارروائیوںمیں تیزی لاکر پاکستان کو عدم استحکام اور مشکلات سے دوچار کرنے کی ہرممکن مکروہ کوشش کی۔ اسی طرح پاکستان کو عالمی سطح پر بدنام کرنے کی کوشش کرتا رہا اور اس حوالے سے سینکڑوں جعلی تنظیمیں اور ذرائع ابلاغ کے ادارے بھارتی سری واستو گروپ کے تحت کئی ملکوں میں نیٹ ورک چلا رہے تھے جو سازش بالآخر یورپین ڈس انفارمیشن لیب نے بے نقاب کردی۔ بھارت کو عالمی سطح پر ذلت اور رسوائی اٹھا نا پڑی۔جہاں تک دہشتگردی کا تعلق ہے پاکستان اس دہشتگردی کے خلاف لڑنے والا فور فرنٹ ملک ہے۔ یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ دہشتگردی پاکستان پر مسلط کی گئی جب کہ اس دہشتگردی کا پاکستان سے کوئی تعلق نہیں۔ امریکہ کی ایماء پر بھارت نے پاکستان میں دہشتگردی کو ہوا دی تاکہ پاکستان کی ترقی ،خوشحالی اور سالمیت کو نقصان پہنچایا جاسکے اور عالمی سطح پر یہ تاثر دیا جاسکے کہ پاکستان سرمایہ کاری کیلئے غیر محفوظ ملک ہے ۔ ان منفی کارروائیوں کا مطلب پاکستان کو عالمی سطح پر تنہا کرنا اور معاشی طور پر مشکلات سے دوچار کرنا تھا لیکن دہشتگردی کے عفریت کو قابو کرنے کیلئے پاک فوج اور دیگر سیکورٹی اداروں نے بے پناہ قربانیوں کے ذریعے دہشتگردوں کو اپنے انجام تک پہنچایا اور اس مقصد کیلئے پاک فوج نے آپریشن ضرب عضب اور آپریشن ردالفساد کے علاوہ دیگر کئی آپریشن کئے اور اس طرح دہشتگردوں کی پناہ گاہوںکو تباہ کرنے کے علاوہ ان کے سہولت کاروں کو بھی کیفر کردار تک پہنچایا گیا۔لہذا آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی یہ سوچ بالکل درست سمت ہے کہ پرامن ،مستحکم اور خوشحال افغانستان درحقیقت پرامن اور خوشحال پاکستان ہے۔

About Aziz

Check Also

آرمی چیف کا دورہ قطر انتہائی اہمیت کا حامل ہے

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باوجوہ کا حالیہ دو روزہ قطر بلاشبہ انتہائی اہمیت کا …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *