بریکنگ نیوز

بھارتی پروپیگنڈہ مشینری کی کارستانیاں

اب انسانیت کو بارود اور آگ سے حقیقی طور پر نجات مل جانی چاہیے
ایک خبر رساں ادارے نے رپورٹ شائع کی ہے کہ بھارت میں ایک اور جعلی فورم بے نقاب ہوا ہے اس فورم کے ایک اہم عہدیدار سمیت تمام ڈائریکٹر زنے استعفےٰ دے دیا ہے ۔پاکستان کے خلاف بھارتی میڈیا اور تھنک ٹینکس کی کارستانیوں کی رپورٹس پے درپے شائع ہونے کے بعد بھارتی ایوانوں میں کھلبلی مچ گئی ہے اور وہ کھسیانی بلی کی طرح کھمبا نوچنے کے مصداق صفائیاں پیش کرنے میں مصروف دکھائی دینے لگے ہیں مگر یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ بھارتی تھنک ٹینکس کا سارازور پاکستان مخالف سرگرمیوں تک محدود رہا ہے ۔بھارت میں اس طرح کے ایسے کئی خفیہ تھنک ٹینکس کی موجودگی کو خارج از امکان قرار نہیں دیا جا سکتا جو مسلسل پاکستان مخالف سفارتی سرگرمیوں میں مصروف رہے ہیں اور یہ سلسلہ ہنوز جاری ہے مگر سوچنے کی بات یہ ہے کہ بھارت اس شعبہ میں اتنی بڑی انویسٹ منٹ کس خیال کے زیر اثر کرتا آیا ہے ۔دنیا جانتی ہے کہ پاکستان کے کبھی بھی توسیع پسندانہ عزائم نہیں رہے ہیں نہ ہی کبھی اس نے بھارت کے خلاف اپنے تھنک ٹیکس کو استعمال کیا ہے مگر اس کے برعکس بھارتی عزائم کھل کر سامنے آ گئے ہیں کہ وہ کشمیر پر اپنا قبضہ برقرار رکھنے اور دیگر پڑوسی ممالک پر اپنے حجم اور قوت کا رعب ڈال کر کیا گل کھلاتا آیا ہے اور اب جب یہ ہنڈیا بیچ چوراہے میں پھوٹ گئی ہے تو بھارتی حکومت اور اس کے ادارے صفائیاں پیش کرنے میں لگے ہوئے ہیں مگر ساتھ ہی اسی روش پر مسلسل کاربند بھی ہیں جس کی مدد سے وہ عالمی برادری میں حمایت حاصل کرنے کی بھونڈی کوششیں کر رہا ہے ۔بھارتی اقدامات کی کارستانی اب جبکہ کھل کر سامنے آ چکی ہے تو ضروری ہو گا کہ بھارت کو خود اس کی زبان میں مناسب جواب دیا جائے تا کہ وہ اس طرح کی بھونڈی حرکات سے باز آ جائے اور پاکستان کو کھلے دل سے تسلیم کرتے ہوئے باہمی حل طلب معاملات میں مذاکرات کا راستہ کھولے تا کہ اعتماد کی فضا بحال ہونے کے بعد برابری کی بنیاد پر بات چیت کا آغاز کیا جا سکے بالخصوص مسئلہ کشمیر پر ایک جامع حکمت عملی اختیار کرتے ہوئے کشمیر کا فیصلہ کشمیریوں کی مرضی سے کرنے کی راہ بھی ہموار کی جا سکے ۔موجودہ حالات کے تناظر میں یہ بھی ضروری ہے کہ حکومت پاکستان عالمی برادری کو مسئلہ کشمیر کے حوالہ سے ایک پیج پر لانے کی کوششوں کو دوام دینے کیلئے اس سلسلہ میں مزید تیزی لائے تا کہ بھارت پر دبائو بڑے اور وہ ہٹ دھرمی چھوڑنے پر مجبور ہو ۔ ضروری ہوگیاہے کہ مظلوم کشمیریوں کی عملی مدد کو یقینی بنانے کیلئے موثر اور عملی اقدامات کئے جائے تاکہ کشمیری عوام جو کئی دہائیوں سے بھارتی مظالم کا شکار ہیں ان کو فوری ریلیف بھی ملے اور ان کی من مرضی کے مطابق فیصلہ کرنے اور امن کے قیام کے لیے ملکر کوششوں کو فروغ دینے کے کام کا باقائدہ آغاز کیا جا سکے ۔ہماری رائے میں یہ عالمی بردری کی بھی اخلاقی اور بین لاقوامی قانون کے مطابق ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ دنیا کے بدلتے حالات کے مطابق کشمیریوں کی مدد کرے اور انسانی ہمدردی کی بنیاد پر کشمیری عوام کو ان کا بنیادی حق خود ارادیت یعنی حق آزادی دلوانے کیلئے سنجیدہ کوششوں کو فروغ دے تا کہ دیرپا امن کی بنیاد رکھنے میں کوئی امر مانع نہ ہو ۔دنیا میں تبدیل ہوتی ترجیحات اور عالمی حالات و واقعات اس بات کا تقاضہ کر رہے ہیں کہ اب بنی نوع انسانیت کو بارود اور آگ سے حقیقی طور پر نجات مل جانی چاہیے اور دنیا کو رہنے کے قابل اور محفوظ بنانے کے لیے خالصتاً انسانی بنیادوں پر مل کر کام کرنے کی اشد ضرورت ہے ۔

About Aziz

Check Also

یوم قرار دادپاکستان، تجدید عہد کادن ،دفاع وطن اور مشکلات کا مقابلہ کرنے کیلئے اتحاد اور یکجہتی انتہائی ضرور ی ہے

مملکت خدادا دپاکستان کا 81واں یوم قرار داد اس سال بھی اس عزم کے اعادہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *