بریکنگ نیوز

عوامی مسائل فوری حل نہ ہونے پر وزیر اعلی پنجاب کا نوٹس لینا امید کی ایک کرن ہے

اگلے روز وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدارنے ایک اعلی سطحی اجلاس کے دوران جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کی کارکردگی پر شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے عوامی مسائل فوری حل نہ کرنے اورفلاح عامہ کے منصوبوں میں تاخیر پر متعلقہ حکام کی سخت سرزنش کی ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ محکموں کو اب کام کر کے دکھانا ہو گا، سست روی بالکل برداشت نہیں کی جائے گی اور کوتاہی پر ذمہ داروں کا تعین کر کے سخت کارروائی کی جائے گی۔ ہماری رائے میں وزیر اعلی پنجاب کا عوامی مسائل کے حل اور فلاح و بہبود کے منصوبوں میں تاخیر پر نوٹس لینا بلاشبہ ایک اچھا اقدام ہے لیکن اس حوالے سے مستقل بنیادوں پر ایک مانیٹرنگ اور مربوط چیک اینڈ بیلنس سسٹم کا ہونا ضروری ہے ۔ بیورو کریسی اسی ملک سے تعلق رکھتی ہے جس طرح ایک عام شہری محب وطن ہوتا ہے اسی طرح اعلیٰ افسران بھی وطن عزیز کے خیر خواہ اور محب وطن ہیں۔ عوامی فلاح وبہبود کے کاموں پر نظر رکھنا مانیٹرنگ سسٹم کے تحت یقینی بنایا جاسکتا ہے اس حوالے سے متعلقہ حکام کو جہاں ہدایات دی جاتی ہیں وہاں ایسے منصوبے جو عوامی فلاح و بہبود اور تعمیر و ترقی سے متعلق ہوں افسران کو بروقت مکمل کرنے پر سراہنا بھی چاہئے اور اگر بعض منصوبوں میں تاخیر ہوتی ہو تو مکمل چھان بین اور تحقیقات کے بعد متعلقہ حکام کے خلاف کارروائی بھی کی جانی چاہئے۔ پنجاب ملک کا سب سے بڑا صوبہ ہے اور اس کی آبادی بھی بارہ کروڑ سے زیادہ ہے۔ اسی طرح جنوبی پنجاب کا حصہ کافی عرصہ تک نظر انداز کیا گیا اور اس میں کوئی دو رائے نہیںکہ متعدد منصوبے گزشتہ ادوار میں بھی جنوبی پنجاب میںمکمل کئے گئے لیکن پھر بھی ہنوز بہت کچھ کرنا باقی ہے کیونکہ جنوبی پنجاب کا خطہ اور یہاں کی اکثر آبادی غربت اور محرومیوں کا شکار ہے۔ اس وقت پی ٹی آئی کی حکومت کو ڈھائی سال سے زیادہ عرصہ کا وقت ہوگیا ہے اورجس انداز میں عوامی فلاح وبہبود کے کام ہونے چاہئے تھے اس رفتار سے تعمیر و ترقی نظر نہیں آتی اب جبکہ حکومت نے جنوبی پنجاب کیلئے علیحدہ سیکرٹریٹ بھی مقرر کیا ہے اور فنڈز بھی مہیا کئے جارہے ہیں تو اس خطے کی محرومیوں کو ختم کرنے کیلئے حکومت اور متعلقہ اداروں کو جنگی بنیادوں پر حکمت عملی کے تحت عوام کی محرومیوں کو دور کرنے کیلئے منصوبے شروع کرنے چاہئے تھے۔ وزیر اعلی عثمان بزدار کا اس صورتحال کا نوٹس لینا ایک اچھی پیشرفت ضرور ہے لیکن اس سلسلے میں مستقل بنیادوں پر عوامی فلاح کے منصوبوں کی نہ صرف نگرانی کی جائے بلکہ ان منصوبوں کی تکمیل کو بروقت یقینی بنایا جائے تو مثبت پیشرفت ہوسکتی ہے ۔ جنوبی پنجاب کے اکثر علاقوں میں عوام بے روزگاری ، غربت اور دیگر مسائل کی وجہ سے مشکلات کا شکار ہیں۔ وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار کا تعلق خود بھی جنوبی پنجاب سے ہے لہذا امید کی جاسکتی ہے کہ حکومت کے باقی ماندہ ٹینور کے دوران متعدد منصوبے تکمیل کو پہنچے گے اور عوام کی خوشحالی کیلئے مزید نئے منصبوے بھی شروع کئے جائیں تاکہ اس خطے کی عوام کی محرومیوں کا ازالہ بھی ممکن ہوسکے اور خوشحالی کے دور کا آغاز بھی ۔

About Aziz

Check Also

یوم قرار دادپاکستان، تجدید عہد کادن ،دفاع وطن اور مشکلات کا مقابلہ کرنے کیلئے اتحاد اور یکجہتی انتہائی ضرور ی ہے

مملکت خدادا دپاکستان کا 81واں یوم قرار داد اس سال بھی اس عزم کے اعادہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *