بریکنگ نیوز

جنوبی ایشیاء میں پائیدار امن کا قیام مسئلہ کشمیر کے منصفانہ حل سے مشروط ہے

یوم پاکستان کی پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا کہنا تھا کہ بلاشبہ جنوبی ایشیاء میں پائیدار امن کا قیام مسئلہ کشمیر کے منصفانہ حل سے مشروط ہے۔ میں کشمیری بہنوں اور بھائیوں کو یقین دلاتا ہوں کہ مشکل کی اس گھڑی میں پوری پاکستانی قوم آپ کے ساتھ کھڑی ہے اور کھڑی رہے گی اور یہ کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے اور یہ بانی پاکستان حضرت قائد اعظم کا فرمان ہے۔ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا کہنا تھا کہ ہم دنیا کے ہر فورم پرکشمیریوں کے حقوق کے لئے آواز بلند کررہے ہیں اور کرتے رہیں گے۔اقوام متحدہ کی قراردادیں کشمیر کو بین الاقوامی تنازعہ تسلیم کرتی ہیں۔ پاکستان نہ صرف خطے بلکہ دنیا میں امن کا خواہاں ہے لہذا ہماری اس خواہش کو کمزوری ہرگز خیال نہ کیا جائے اور اس سلسلہ میں کسی کوتاہ بینی کا جواب پوری قوت سے دینا ہمارا فرض ہے ۔ہم اپنی سلامتی اور دفاع کیلئے پرعزم اور ہر قسم کی صلاحیتوں سے لیس ہیں اور اپنی آزادی کا ہر قیمت پردفاع کرنا جانتے ہیں ۔ہماری رائے میں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے بھارت کو واضح پیغام دے دیا ہے کہ مسئلہ کشمیر ایک بین الاقوامی تنازعہ ہے اور اس کا منصفانہ حل کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق ضروری ہے۔5اگست 2019ء کے غیر قانونی اقدام سے بھارت اس غلط فہمی نہ رہے کہ کشمیر اس کا حصہ بن گیا ہے بلآخر بھارت کو کشمیر سے بوریا بستر گول ہی کرنا پڑے گا۔ بھارت اس زعم میں مبتلا ہے کہ وہ امریکہ کی آشیر باد سے اس علاقے کا بڑا چوہدری ہے لیکن اس کی یہ ساری غنڈا گردی اور چودھراہٹ چین نے کافی حد تک دھلائی کرکے راہ راست پر لائی ہے۔ بھارت کا یہ تکبر اور گھمنڈ بلآخر ٹوٹے گا جب کشمیریوں پر کی جانے والے ظلم کے باعث اللہ کا عذاب بھارت پر آئے گا اور اس کے وجود کے کئی ٹکڑے ہوجائیں گے۔ بھارت کو یہ بات جان لینی چاہئے کہ وہ کسی صورت بھی مستقل طور پر ریاست جموں و کشمیر پر قابض نہیں رہ سکتا اگر وہ عالمی تاریخ سے سبق نہیں سیکھتا تو بھارت کو اس کی بہت بڑی قیمت چکانا پڑے گی۔ پاکستان کا دفاع الحمد اللہ مضبوط اور توانا ہے ۔ بھارت کو اس بات کا بخوبی ادراک ہونا چاہئے کہ پاکستان نہ صرف ایک ایٹمی قوت ہے بلکہ اس کی فوج بہترین پیشہ وارانہ صلاحیت کی حامل ہے۔ گزشتہ دو سے زیادہ دہائیاں گزر چکی ہیں کہ پاکستان کی افواج دہشتگردوں کے خلاف جنگ میں مصروف ہے۔ دہشتگردوں کے خلاف جنگ میں بڑی بڑی قوتیں حوصلہ ہار جاتی ہے ۔ امریکہ اور بڑی طاقتیں بھی دہشتگردوں کا مقابلہ نہ کرسکیں لیکن پاکستان میں لگائی گئی اس پرائی آگ میں بین الاقوامی سازش کے تحت پاک فوج کو گھسیٹا گیا لیکن پاک فوج کے جوانوں کی قربانیوں اور مجموعی طور پر پوری قوم نے اس دہشتگردی کو شکست دینے میں بہت بڑی قیمت ادا کی۔ پاکستان قائم رہنے کیلئے معرض وجود میں آیا تھا کیونکہ یہ مملکت خدا داد 27رمضان المبارک کی شب 14اگست 1947ء کو بانی پاکستان حضرت قائد اعظم محمد علی جناح کی ولولہ انگیز کی قیادت میں معرض وجود میں آیا ۔ لہذا اس کے وجود کو ختم کرنے والے خود ختم ہوجائیں گے لیکن یہ رہتی دنیا تک قائم و دائم رہے گا(ان شاء اللہ )۔ لہذا نہ صرف اہلیان پاکستان بلکہ عالم اسلام کی ترجمانی اور حفاظت پاکستان کے حصے میں ہے۔ تاریخ کے اوراق گواہ ہیں کہ پاکستان نے مشکل کی ہر گھڑی میں دنیا کے کسی خطے میں بھی اپنی افواج کی پیشہ وارانہ صلاحیتوں کا بخوبی استعمال کیا جس کے باعث دنیا میں پاکستانی افواج کا ایک نام اور وقار ہے اور دنیا اس کی صلاحیتوں کی معترف ہے ۔ صدر پاکستان نے قائد اعظم کے فرمان کے مطابق کشمیر کو شہ رگ پاکستان قرار دیا اور یہ ایک حقیقت ہے کیونکہ بانی پاکستان کی دانشمندی اور دور اندیشی اس بات کا ادراک رکھتی تھی کہ ریاست جموں و کشمیر کیوں پاکستان کی شہ رگ ہے۔ اس بات کا اندازہ اب ہر ذی شعور انسان کو بخوبی ہوگا۔ ریاست جموںو کشمیر کے بغیر پاکستان نامکمل ہے کیونکہ لفظ پاکستان کے اندر (ک) کشمیر کی علامت ہیں۔ کوئی انسان اپنی شہ رگ کسی دشمن کے قبضے میں نہیں رہنے دے سکتا لیکن گزشتہ 74سال سے بھارت نے پاکستان کی شہ رگ کو دبوچ رکھا ہے۔ لیکن تنگ آمد بہ جنگ آمد کے مصداق بھارت پاکستان کو اس سطح پر نہ لے آئے کہ اس خطے میں خوفناک جنگ کا آغاز ہوجائے۔ اس صورتحال سے پہلے ہی بھارت کو کشمیر کے حل کیلئے اپنے روئیہ میں تبدیلی کرنا ہوگی۔ پاکستان کے دریائوں کا رخ، تمام سمتیں اور جہتیں پاکستان سے وابستہ ہیں ۔ بہتے ہوئے دریا پاکستان کی طرف موجیں مارتے ہوئے آتے ہیں لیکن ریاست کا کوئی دریا بھی بھارت کی طرف نہیں بہتا ۔ اس کے باوجود ہندوتوا کے پجاری میں نہ مانوں کی رٹ اور بلاوجہ ضد اور ہٹ دھرمی پر قائم ہیں۔ لیکن اگر بھارت نے نوشتہ دیوار نہ پڑھا اور حالات کی سنگینی کو نہ سمجھا تو پھر وقت دور نہیں کہ نہ سمجھوگے تو مٹ جائو گے اے ہندوستان والو! تمہاری داستاں تک نہ ہوگی داستانوں میں!

About Aziz

Check Also

کورونا وباء کو قابو کرنے کیلئے حکومتی اقدامات پر عملدر اآمد یقینی بنایا جائے

پوری دنیا میں مہلک وبا کورونا کے حملے جاری ہیں اور اب تیسری لہر شروع …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *