بریکنگ نیوز

حکومت تعلیمی اداروں کو 15اگست تک کھول دے ،سراج الحق

چارسدہ:جماعت اسلامی پاکستان کے امیر سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ ملک کے دیگر شعبوں کی طرح عصری اور مذہبی تعلیمی اداروں کو 15 اگست سے (ایس او پیز)کے تحت کھول دیا جائے۔تعلیمی پالیسی سازی میں نجی تعلیمی اداروں کے مالکان اور ماہرین کو شامل کیا جائے۔ نجی تعلیمی اداروں کے لئے حکومت ریلیف پیکج کا اعلان کرے۔ نجی تعلیمی اداروں کے اساتذہ کی تنخواہیں، یوٹیلیٹی بلز، عمارتوں کے کرائے اور بچوں کی فیس حکومت جمع کرے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے نافع پاکستان کے زیر اہتمام نجی تعلیمی اداروں کے مسائل و مشکلات اور حالیہ بندش کے حوالے سے نجی تعلیمی اداروں کے ذمہ داران سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔اس دوران نافع ضلع چارسدہ کے چیئر مین اور پین کے پی کے کے صوبائی نائب صدر جاوید خان بھی موجود تھے۔ سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ آئین کے آرٹیکل 25-اے کے مطابق ہر بچے کو تعلیم دینا ریاست کی ذمہ داری ہے۔لیکن اسوقت 60 فیصدبچے نجی تعلیمی ادروں میں زیر تعلیم ہیں۔اگر یہ نجی تعلیمی ادارے نہ ہوتے تو کیا حکومت کے پاس اتنی عمارتیں ، اتنے اساتذہ اور اتنا اچھا نظام موجود ہے۔اگر حکومت کے پاس نظام ہوتا تو اب 2.5 کروڑ بچے تعلیمی اداروں سے باہر نہ ہوتے۔انہوں نے کہا کہ نجی تعلیمی اداروں نے حکومت کو سہارا دیا ہے۔

حکومت کو انکی حوصلہ افزائی کر نی چاہئیے تھی، کورونا کی وجہ سے نجی تعلیمی اداروں کی بندش کے دوران بچوں کی فیس، اساتذہ کی تنخواہیں اور عمارتوں کا کرایہ حکومت کو ادا کرنا چاہئیے تھا۔ لیکن حکومت نے نجی تعلیمی اداروں کو بے سہارا چھوڑ دیا، حکومت سے مطالبہ ہے کہ ملک کی دیگر شعبوں کی طرح 15 اگست سے نجی تعلیمی ادارے اور مدارس کو فی الفور کر دی جائے اور عصری و مذہبی تعلیمی اداروں کی تمام مسائل و مشکلات کو فوراًحل کیا جائے، جماعت اسلامی نجی تعلیمی اداروں کے مسائل و مشکلات کو حل کرنے میں ان کے ساتھ بھر پوار تعاون کرے گی۔ اجلاس سے نافع کے مرکزی ڈائر یکٹر ہدایت خان نے بھی خطاب کیا۔

About Aziz

Check Also

کورونا وائرس کے باعث چھ ماہ سے بندپرائمری سکولز کھل گئے ،تدریسی سرگرمیوں کا آغاز

 اسلام آباد :عالمی وبا کورونا وائرس کے باعث چھ ماہ سے بند پرائمری سکولز میں …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *