بریکنگ نیوز

ماحولیاتی آلودگی کیس’ راول ڈیم میں مضر صحت مواد شامل ہونے پرسی ڈی اے سے رپورٹ طلب

اسلام آباد(عبدالروف بزمی)سپریم کورٹ نے بنی گالہ ماحولیاتی آلودگی سے متعلق کیس میں سی ڈی اے اور ایم سی آئی سے ایک ماہ میں رپورٹ طلب کرلی. پلاننگ کمیشن کی منصوبہ بندی پر پانچ ماہ لگانے پر عدالت برہم. عدالت نے راول ڈیم میں مضر صحت مواد شامل ہونے پر رپورٹ بھی طلب کرلی. سپریم کورٹ میں بنی گالہ ماحولیاتی آلودگی سے متعلق کیس کی سماعت جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی. عدالت نے کہا ہمیں کہ دریاں اور ڈیموں کو صاف کرنا ہے، پانی میں مضرصحت مواد کہاں سے شامل ہو رہا ہے اس کا بھی پتا لگائیں اور روکا جائے،

عدالت نے سینیٹیشن منصوبے کے لئے ایک ماہ میں پیشکشیں وصول کرنے کی ہدایت کردی سی ڈی اے اور میونسپل کارپوریشن کے اختیارات کا معاملہ جلد حل کرنے اور بری امام کے علاقے میں جلد از جلد درخت لگانے کا حکم دے دیا.وکیل سی ڈی اے نے عدالت کو بتایا کہ بنی گالہ ماحولیاتی آلودگی منصوبوں پر مجموعی طور پر چار ارب روپے لاگت آئے گی، اس وقت ہمارے پاس پچاس کروڑ روپے موجود ہیں، جس پر جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا 50 کروڑ سے کیا بنے گا یہ تو کنسلٹنٹ پر بھی پورے نہیں ہوں گے، منصوبے پر سنجیدگی سے کام کیا جائے، وکیل سی ڈی اے نے کہا پلاننگ کمیشن نے کام کا آغاز کیا تھا لیکن کرونا وائرس کی وجہ سے تعطل پیدا ہوا، رواں سال دسمبر تک دوبارہ کام کا آغاز کر دیا جائے گا۔جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا آپ کی رپورٹ میں فنانس کی کمی کی کا کوئی ذکر نہیں ہے، راول ڈیم کے ارد گرد اب بھی غیر قانونی تعمیرات کا سلسلہ جاری ہے، کیا راول ڈیم کی صفائی کے کام کا آغاز کردیا گیا ہے، پی ایس ڈی پر تو پانچ سال لگ جائیں گے اگلے تین ماہ میں اس کر کام شروع کیا جائے، سی ڈی اے نے عدالت کو یقین دہانی کراتے ہوئے کہا میونسپل کارپوریشن کے ساتھ مل کر کام جلد مکمل کر لیں گے، نمائندہ سی ڈی اے نے بتایا صاف پانی کے تین مزید منصوبے ای الیون اور سید پور میں شروع کیے جا رہے ہیں. عدالت نے کیس کی سماعت نومبر تک ملتوی کر دی.۔

About admin

Check Also

حکومت آئین ، جمہوری پارلیمانی عمل کو ہر پہلو سے تباہ کر رہی ہے،لیاقت بلوچ

لاہور :ک ادارہ کی آئینی مدت کم کی جائے گی تو قومی اور صوبائی اسمبلیوں …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *